71

بھارتی فوجیوں کا کپواڑہ میں لوگوں پر وحشیانہ تشدد، محاصرہ برقرار، نظام زندگی48روز بھی مفلوج

مقبوضہ کشمیر
بھارتی فوجیوں کا کپواڑہ میں لوگوں پر وحشیانہ تشدد، محاصرہ برقرار، نظام زندگی48روز بھی مفلوج

سرینگر(لاہور پوسٹ)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے ضلع کپواڑہ کے علاقے پنزگام میں گھروں پر چھاپوں کے دوران مکینوں کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق بھارتی فوجی پنزگام میں گھروں میں داخل ہو گئے اور مکینوں کو جنس وعمر کا لحاظ کیے بغیر بہیمانہ تشد د کا نشانہ بنایا ، گھریلواشیاء کی توڑ پھوڑ کی اور لاکھوں روپے مالیت کی املاک تباہ کیں۔ دریں اثنا بھارتی پویس نے ضلع پلوامہ سے دو افراد سہیل احمد ڈار اور بشیر احمد لون کو جھوٹے مقدمات میں گرفتار کر لیا۔ ادھر مقبوضہ کشمیر میں آج 4 8ویں روز بھی بھارتی فوج کا محاصرہ برقرار ہے جس کی وجہ سے لاکھوں افراد گھروں نے اندر محصور ہیں اور مقبوضہ وادی میں نظام زندگی بری طرح سے مفلوج ہے۔ مقبوضہ وادی میں جگہ جگہ بڑی تعداد میں تعینات بھارتی فورسز اہلکاروں نے ہر طرف خوف و دہشت کا ماحول قائم کر رکھا ہے اور لوگ گھروں سے باہر آنے سے خوفزدہ ہیں ۔ دکانیں ،کاروباری مراکز اور تعلیمی ادارے بند ہیں جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی آمد و رفت معطل ہے۔ سرکاری دفاتر میں ملازمین کی حاضری انتہائی کم ہے ۔وادی کشمیر اور جموں کے مسلم اکثریتی علاقوں میں انٹرنیٹ، موبائل فون سروس معطل جبکہ ٹیلی ویژن نشریات بند ہیں۔ مقبوضہ وادی میں پانچ اگست سے ریل سروس بھی بند ہے۔ ریلوے ذرائع کے مطابق سروس بند رہنے کی وجہ سے اب تک ریلوے کو کم از کم ایک کروڑ روپے کا نقصان پہنچا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں