121

حکومت کو ٹف ٹائم، سیاسی رہنماؤں کے رابطے تیز

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور اور عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفند یار ولی کی ملاقات ہوئی جس میں فضل الرحمان کے آزادی مارچ سمیت اہم معاملات پر بات چیت کی گئی۔ مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ کے اعلان کے بعد اپوزیشن کے رابطوں میں تیزی آ گئی ہے۔ بلاول بھٹو کی اے این پی کے سربراہ اسفند یار ولی سے ملاقات ہوئی جس میں آزادی مارچ کے حوالے سے تفصیلی مشاورت، سیاسی صورتحال پر گفتگو اور آئندہ کے لائحہ عمل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ فرحت اللہ بابر کا کہنا تھا کہ دونوں جماعتوں کے درمیان ملک کی سیاسی صورتحال اور آئندہ کے لائحہ عمل پر بھی بات ہوئی۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ موجودہ حکومت دھاندلی کی پیداوار ہے، اس کے لئے اپوزیشن متحد ہے اور متحد رہنا ہوگا۔ اس حکومت کا گھر جانا ضروری ہے۔میاں افتخار حسین کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت نے ملک تباہ کر دیا ہے۔ عمران خان نے اقوام متحدہ میں پاکستان کی پگڑی اچھالی ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ شفاف انتخابات کا انعقاد یقینی بنایا جائے۔میاں افتخار نے کہا کہ ایسی فضا بنائی جائے کہ 27 تاریخ کو پوری اپوزیشن کی تاریخ بن جائے۔ مولانا فضل الرحمن صاحب اے پی سی بلائیں تا کہ آئندہ کا لائحہ عمل طے کر لیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت چاہتی ہے کہ اپوزیشن تقسیم ہو لیکن ایسا نہیں ہوگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں