محکمہ زراعت نے کپاس کی ریکارڈ پیداوارکیلئے منصوبہ بندی شروع کر دیں

image

محکمہ زراعت نے آئندہ برس کپاس کی ریکارڈ پیداوار کیلئے منصوبہ بندی شروع کردی ہے۔ اس حوالے سے محکمہ زراعت کے ڈائریکٹرجنرل (توسیع) سید ظفر یاب حیدر کی زیر صدارت اجلاس میں کپاس کی پیداوار بڑھانے کیلئے مختلف پہلوؤں کا جائز ہ لیا گیا جبکہ کپاس کی ریکارڈ پیداوار کے لئے سفارشات بھی تیار کر لی گئیں۔ذرائع کے مطابق اس اجلاس میں ماہرین نے کپاس پرسپرے کرنے کے لئے ٹھیکیداروں کی مدد لینے کا انکشاف کیا گیا جبکہ ماہرین نے کاشتکاروں کو سپرے خود کرنے کی ہدایت کی ہے ۔کرائے پر کئے گئے سپرے سے نہ صرف فصل پر مکمل طور پر سپرے نہیں ہو پاتا بلکہ کاشتکار کی لاگت بھی ضائع ہوتی ہے ۔ اجلاس میں کاشتکاروں کپاس پر سپرے کرنے کے لئے جامع منصوبہ بندی کرنے کی ہدایت کی گئی۔جدید تحقیق کے مطابق ناقص سپرے مشینری اور صحیح طریقہ سے سپرے نہ کرنے کی وجہ سے کرم کش ادویات کا تقریباً 50 فیصد حصہ ضائع ہوجاتا ہے جس سے نہ صرف کپاس یا دوسری فصلات کی پیداواری لاگت میں اضافہ ہوتا ہے بلکہ کیڑوں کی قوت مدافعت میں اضافہ کے علاوہ ماحولیاتی آلودگی بھی بڑھ جاتی ہے۔ کپاس کی پیداواری لاگت کا 50 فیصد صرف کرم کش ادویات پر خرچ ہوتا ہے جس کے نتیجے میں یہ بات اور بھی اہم ہوجاتی ہے کہ زہرپاشی صحیح آلات سے اور صحیح طریقوں سے کی جائے۔ زہر پاشی کے آلات یعنی ہینڈ سپریئرز اور ٹریکٹر بوم سپرئیر کا نہ صرف اچھا اور صحیح ہونا ضروری ہے بلکہ سپرے کرنے سے قبل ان کی کیلی بریشن (پیمانہ بندی) بھی ضروری ہے تاکہ ہمیں یہ پتہ چل سکے کہ ہم کون سی نوزل استعمال کرتے ہوئے کس رفتار سے چل کر کھیت میں مطلوبہ مقدار میں زہرپاشی کرسکتے ہیں ۔

خبریں