اسلام آباد ہائیکورٹ نے الیکشن ایکٹ کی دفعات 202 اور 204 کو معطل کر دیا

image

اسلام آباد ہائیکورٹ نے الیکشن ایکٹ کی شقیں 202 اور 204 معطل کر دیں۔ عدالت نے الیکشن کمیشن سمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔

جسٹس عامر فاروق نے سیاسی جماعتوں کی جانب سے دائر درخواستوں پر سماعت کی۔ ایڈووکیٹ حافظ محمد سفیان اور چوہدری حامد سیاسی جماعتوں کی جانب سے پیش ہوئے۔ وکیل درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ بل میں شامل یہ دفعات آئین پاکستان اور بنیادی انسانی حقوق کے متصادم ہے۔ نئے بل کے تحت سیاسی جماعتوں کے لئے 2 لاکھ روپے جمع کرانا لازمی ہے، اس کے علاوہ 2 ہزار سے زائد ممبران کے شناختی کارڈز کی کاپی دستخط کیساتھ جمع کرانا بھی لازم ہے۔ عدالت نے کیس کی مزید سماعت 9 جنوری تک ملتوی کر دی گئی۔

خبریں