نااہلی کے باوجود سرکاری پروٹوکول لینے نوازشریف اور مریم صفدرکو نوٹس جاری

image

لاہور ہائی کورٹ میں سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز سے سرکاری پروٹوکول واپس لینے سے متعلق درخواست پر سماعت ہوئی، پی ٹی آئی رہنما عندلیب عباس کی درخواست پر کیس کی سماعت جسٹس شاہد کریم نے کی۔درخواست گزار عندلیب عباس کے وکیل نے عدالت میں مؤقف پیش کیا کہ سپریم کورٹ نے نوازشریف کو نااہل کیا لیکن اس فیصلے کے بعد سابق وزیراعظم ناصرف پنجاب ہاؤس استعمال کررہے ہیں بلکہ ان کے پروٹوکول میں 40 گاڑیاں بھی شامل ہوتی ہیں جب کہ پاناما کیس میں جے آئی ٹی کے سامنے پیشی کے دوران نوازشریف اور مریم نواز کے پروٹوکول کی مد میں 2 کروڑ 18 لاکھ روپے خرچ کئے گئے جو عوام کے پیسوں کا ضیاع ہے۔ درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی کہ نوازشریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز سے پروٹوکول واپس لیا جائے اور پنجاب ہاؤس کے استعمال پر پابندی عائد کی جائے۔

عدالت نے نوازشریف اور مریم نوازکو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 21 دسمبر تک ملتوی کردی جب کہ ملزمان سمیت دیگر فریقین سے بھی جواب طلب کرلیا ہے۔

خبریں