ابوظہبی میں طلاق کے رجحان میں اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے

image

ابوظہبی میں طلاق کے رجحان میں اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔ متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت میں 50 فیصد سے زائد شادیاں 3 سال سے زیادہ عرصے تک نہیں چل پاتیں۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ برس 5892 شادیاں رجسٹرڈ ہوئیں جن میں سے طلاق کے 1922 واقعات رپورٹ ہوئے جن میں سے 978 خواتین کا تعلق امارات سے تھا۔ گزشتہ برس ہونے والی شادیوں میں 28.2 فیصد سے زائد جوڑے ایک ساتھ شادی کا ایک سال بھی مکمل نہیں کر پائے۔ حکومتی اعدادوشمار کے مطابق ابوظہبی میں 1975ء کے بعد سے شادیوں کی شرح میں 5 اعشاریہ 8 فیصد سالانہ اضافہ ہو رہا ہے۔

اعدادوشمار کے مطابق یو اے ای میں مردوں کی شادی کی اوسط عمر 28 سال جبکہ خواتین کی شادی کی اوسط عمر 25 سال ہے۔ یو اے ای میں مارچ کے مہینے میں سب سے زیادہ شادیاں رجسٹرڈ ہوئیں جبکہ جون کے مہینے میں سب سے کم شادیاں ریکارڈ کی گئیں۔ 2015ء کے مقابلے میں گزشتہ سال طلاق کی شرح میں تھوڑی کمی دیکھنے میں آئی۔ اس مدت کے دوران 1000 شادیوں میں طلاق کی شرح 7 اعشاریہ 9 سے کم ہو کر 7.6 تک دیکھی گئی۔ رپورٹ کے مطابق یواے ای میں 15 یا اس سے زائد عمر کے 58 اعشاریہ 6 فیصد لوگ شادی شدہ جبکہ 35 اعشاریہ 7 فیصد غیر شادی شدہ ہیں، اس کے علاوہ باقی تمام لوگ طلاق یافتہ ہیں۔

خبریں