خبریں پڑھیں صرف اور صرف مستند شاندار سروس کا آغاز

image

 امریکی یونیورسٹی سینٹا کلارا کے مارکولا سینٹر فار ایپلائڈ ایتھکس نے سماجی رابطوں کی ویب ساٹس پر عوام الناس کو جھوٹی خبروں سے محفوظ رکھنے کے لیے ٹرسٹ پراجیکٹ کا آغاز کیا ہے۔ اس پراجیکٹ میں پچھتر عالمی خبر رساں اداروں نے شمولیت اختیار کی ہے۔ہم اکثر ہی سوشل میڈیا پر خبریں پڑھتے ہیں۔ ان خبروں میں کچھ جھوٹی خبریں بھی ثابت ہوتی ہیں۔ بعض اوقات تو سچی اور جھوٹی خبر میں فرق کرنا ناممکن ہو جاتا ہے۔ ٹرسٹ پراجیکٹ کی بدولت اب سوشل میڈیا صارفین سوشل میڈیا پر موجود سچی اور جھوٹی خبروں میں فرق کر سکیں گے۔

جھوٹی خبروں کا نقصان خبر رساں اداروں کو بھی اٹھانا پڑتا ہے۔ ایسی خبریں ان اداروں کی ساکھ کو مٹی میں ملا دیتی ہیں۔ سوشل میڈیا کی آمد کے بعد سے یہ مسئلہ زیادہ نمایاں ہو گیا تھا۔ اس پراجیکٹ میں گوگل، فیس بک اور ٹویٹر بھی شامل ہو گئے ہیں۔لوگوں تک صرف مستند خبریں پہنچانے کے لیے اس پراجیکٹ میں شامل سوشل میڈیا کی انتظامیہ اپنی ویب سائٹ پر شئیر کی جانے والی خبروں کے لیے "ٹرسٹ انڈیکیٹرز" بنائیں گے۔ یہ ٹرسٹ انڈیکیٹرز صارفین کو خبر کے ذرائع کا مستند ہونے کا یقین دلائیں گے۔

فیس بک نے گزشتہ روز سے خبروں کے ساتھ ٹرسٹ انڈیکیٹرز دینا شروع کر دیے ہیں۔ یہ ٹرسٹ انڈیکیٹر ایک چھوٹے سے آئیکن کی صورت میں نظر آئے گا۔ اس آئیکن پر کلک کرنے سے صارف خبر رساں ادارے کے خبروں کے لیے طے کردہ معیار اور خبر رپورٹ کرنے والے صحافی کے بارے میں معلومات جان سکیں گے۔

خبریں